Best 5 Romantic Ghazals – Urdu Poetry

Top 5 Romantic Ghazals – Poetry in Urdu

درج ذیل غزلیات سادگی اور اختصار کا حسین امتزاج، وفا وجفا  کا  لا متناہی تسلسل ، عاشق و رقیب کی باہمی چپقلش   کی آئینہ دار ہیں۔

  1. نہیں تجھ میں وفا تو چلو جفا ہی دے دو
  2. دوست مجھ کو یوں محبت کا صلہ دینے لگے
  3.  جیسی تھی سوچ میری، نہ ویسا ملا مجھے
  4. اے دل کسی کی یاد میں نہ رویا کر
  5. کتاب دل کے صفحوں پر لکھی تحریر تم ہی ہو

—————————————————

غزل نمبر  ۱

—————————————————

نہیں تجھ میں وفا تو چلو جفا ہی دے دو

کرو دل لگی عمر بھر کی، سزا ہی دے دو

اک تیرے ہی چہرے پہ رک جاتی ہے نظر

ان گستاخ اکھیوں کو حیا ہی دے دو

بہت بے حیا، بے ادب ہوا جاتا ہے دل

ڈانٹ کر اسے دو لفظ، سنا ہی دے دو

بے تاب جذبوں کو تم کچھ تو تسلی بخشو

چلو دعا نہ سہی تو بد دعا ہی دے دو

خدا کی قسم مغرور جہاں میں ہو جاؤں

اپنے قدموں میں تھوڑی جگہ ہی دے دو

آنکھوں نے سجایا ہے خوابوں میں تمہیں

بن کر تعبیر اپنی بانہوں کا گھیرا ہی دے دو

مہک اٹھے میری دنیا تیرے پیار میں نینا

خود کو چاہنے کا تکبر اور انا ہی دے دو!!!

—————————————————

غزل نمبر  ۲

—————————————————

آپڑا جب وقت اپنے بھی سزا دینے لگے

دوست مجھ کو یوں محبت کا صلہ دینے لگے

فصل گل میں بھی میرا خاروں سے دامن لیس تھا

کس لئے پودے لگائے تھے اور کیا دینے لگے

زندگی میں موت کی جو دیتے رہے بد دعا

آگئی جب موت تو جینے کی دعا دینے لگے

بیچ ڈالی غیرت ایماں جب غیروں کے ہاتھ

آج پھر کچھ لوگ ایماں کی صدا دینے لگے

خیر ہو یارب تسلی تک نہ دے سکتے تھے جو

آج وہ بیمار کو آکر دوا دینے لگے

ایک مدت سے گریزاں ہی رہے ملنے سے جو

آؤ بیٹھو کیا پیو گے وہ یہ آواز دینے لگے

بے ارادہ بھی جو شاکرؔ  اک نظر تکتے نہ تھے

ٹھہر جاؤ اک گھڑی وہ خدا کا واسطہ دینے لگے

—————————————————

غزل نمبر۳

—————————————————

 جیسی تھی سوچ میری، نہ ویسا ملا مجھے

پتھر ہوا، نہ موم،  نہ شیشہ ملا مجھے

بیتی عمر یونہی تو میں سمجھوں گا رائیگاں

منزل ملی کوئی،  نہ تو رستہ ملا مجھے

ہر دور میں ہوا ہے خوشی کا قتل عام

ہر موڑ پہ ارمان کا لاشہ ملا مجھے

دل میں سخاوتوں کی امنگ دل میں رہ گئی

افسوس ہے نصیب سے کاسہ ملا مجھے

زاہدؔ  نہ مل سکا ہے ملاقات کا شرف

ان کی طرف سے وعدہ ہی وعدہ ملا مجھے

—————————————————

غزل نمبر  ۴

—————————————————

اے دل کسی کی یاد میں نہ رویا کر

میری جان تو بھی چین سے سویا کر

یہاں کوئی کسی کا اپنا نہیں

تو بھی کسی کا نہ ہویا کر

ایک لمحے میں قتل کردیتے ہیں

کوئی ارمان نہ دل میں پرویا کر

دل کی زمین زرخیز نہیں ہوتی

وفا کا بیج نہ اس میں بویا کر

یہاں کوئی نہیں رکھتا زخموں پر مرہم

تو رو کر ہی داغ ؔ دل  کو دھویا کر

—————————————————

غزل نمبر  ۵

—————————————————

Tum hi ho sad urdu poetry

کتاب دل کے صفحوں پر لکھی تحریر تم ہی ہو

سنو جاناں! مرے دل میں چھپی تصویر تم ہی ہو

تمہیں کیسے بھلاؤں جانِ من تم ہی بتاؤ

خدا ہی کی طرف سے جب میری تقدیر تم ہی ہو

مجھے تعبیر والوں نے یہ خوشخبری سنائی ہے

کہ میں اک خواب ہوں اس خواب کی تعبیر تم ہی ہو

مجھے تو فقط تم سے غرض ہے نہ کہ اثاثے  سے

اویسؔ   تم ہی میرا سب کچھ، میری جاگیر تم ہی ہو

متعلقہ ناولز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی پڑھ لیں
Close